Bhang Pete Hain Na Ganja Na Chars Pete Hain

بھنگ کھاتے ہیں نہ گانجا نہ چرس پیتے ہیں

بھنگ کھاتے ہیں نہ گانجا نہ چرس پیتے ہیں

ہم وہ بھنورے ہیں جو احساس کا رس پیتے ہیں

آپ اس ڈھنگ سے امرت بھی نہیں پی سکتے

جس ہنر مندی سے ہم اشک نفس پیتے ہیں

سب یہیں چھوڑ کے جانا ہے خبر ہے لیکن

پھر یہ ہم کس لئے دنیا کی ہوس پیتے ہیں

جو تری یاد کے کیڑے ہیں بدن کے اندر

وہ مری روح کو کھاتے ہیں پلس پیتے ہیں

تب کہیں ہوتا ہے اک شہد کا چھتا تیار

ان گنت پھولوں کا خوں جب یہ مگس پیتے ہیں

آپ اک بوند بھی پی لیں تو غشی آ جائے

غم کے آنسو جو اسیران قفس پیتے ہیں

فیضؔ کی فکر کی بوتل میں ہے جو زہر سخن

دیکھنا ہے کی ابھی کتنے برس پیتے ہیں

فیض خلیل آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1304) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faiz KhalilAbadi, Bhang Pete Hain Na Ganja Na Chars Pete Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faiz KhalilAbadi.