Kahu Or Kiya Chorna Hai Mujhe

کہو اور کیا چھوڑنا ہے مجھے

کہو اور کیا چھوڑنا ہے مجھے

وہ گھر جس میں اپنوں کی موجودگی مشکبارِ اگر تھی، وہ گھر چھوڑ آئی

وہ جن روزنوں سے مہک آ رہی تھی شناسائی، دیرینہ رشتوں کی ،میں ان سے گزری

جو میرے لئے جابجا کھل گئے تھے، وہ در چھوڑ آئی

جو دنیا مری عمر بھر کی کمائی

جہاں میرے ہونے کے معنیٰ کئی تھے

اسے ہو کے میں دربدر، چھوڑ آئی

وہ جن راستوں پر مرے پیر پڑتے تو کتنے زمانے مرے منتظر تھے

میں اک لمحہ ُ زشت کے ہو کے زیر اثر، چھوڑ آئی

اگر سوچتی تو تمہیں پا نہ سکتی سو انجام سے بے خبر ،چھوڑ آئی

میں اپنی سہولت کے ہر دائرے سے نکل کر پڑی ہوں

توہونے کے سارے نشانوں سے نکلی ہوئی کس قدر بے نشان ہو گئی ہوں

کہو اور کیا، اور کیا چھوڑ دوں میں

مدور،مثلث،کسی مستطیلی

کسی چورسی منطقے سے تعلق ہی کب رہ گیا ہے

بس اک ڈور سا مستقیماً تعلق

کہ جس کے سرے پر کھڑے دیکھتے ہو

مرے ہاتھ میں دوسرا جو سرا ہے

کہو چھوڑ دوں میں؟

فاخرہ نورین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(513) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fakhra Noreen, Kahu Or Kiya Chorna Hai Mujhe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fakhra Noreen.