Seeta Main Tujh Se Baghi

سیتا میں تجھ سے باغی

عجب مصیبت میں گھر گئی ہوں

گئ رتوں میں، میں جتنی چاہت سے تیری قربت کی لذتوں سے کشیدتی تھی،

وہ انگبیں مے سے سرخ لمحات ِ پرمسرت،

کہ جن کے آنے کی چاپ میرے لہو سے باہر بھی بولتی تھی، میں ایک اک لمحہ کتنی شدت بھری ترازو میں تولتی تھی،

تو وصل رت کی وہ لحظہ لحظہ سرکتی ریشم کی شال

تن سے اتر کے بھی ساتھ لپٹی رہتی،

میں ہجر میں بھی مہکتی رہتی،

مگر میں اب اپنی شدتوں ہی سے ڈر گئی ہوں تو سوچتی ہوں، کہ دستیابی میں شدتوں کا جواز کیا ہے،

مری سہولت کے دایرے میں پڑے ہوئے شخص کچھ تو بولو،

مجھے بتاؤ گے راز کیا ہے؟

اجازتوں سے بھرے علاقے میں رہنے والو !

کوئی تو بولو،

وفورِ جذبات کیا بلا ہے؟

یہ کیا وبا ہے کہ ما تیسر کی آرزو جان لے رہی ہے،

میں اس قناعت سے ڈر گئی ہوں،

عجیب نفرت سے بھر گئی ہوں

۔میں ۔۔۔۔۔مرگئی ہوں

فاخرہ نورین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(669) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fakhra Noreen, Seeta Main Tujh Se Baghi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fakhra Noreen.