Koch Bas Hi Nah Tha Warna Yeh Ilzaam Nah Letay

کچھ بس ہی نہ تھا ورنہ یہ الزام نہ لیتے

کچھ بس ہی نہ تھا ورنہ یہ الزام نہ لیتے

ہم تجھ سے چھپا کر بھی ترا نام نہ لیتے

نظریں نہ بچانا تھیں نظر مجھ سے ملا کر

پیغام نہ دینا تھا تو پیغام نہ لیتے

کیا عمر میں اک آہ بھی بخشی نہیں جاتی

اک سانس بھی کیا آپ کے ناکام نہ لیتے

اب مے میں نہ وہ کیف نہ اب جام میں وہ بات

اے کاش ترے ہاتھ سے ہم جام نہ لیتے

قابو ہی غم عشق پہ چلتا نہیں ورنہ

احسان غم گردش ایام نہ لیتے

ہم ہیں وہ بلا دوست کہ گلشن کا تو کیا ذکر

جنت بھی بجائے قفس و دام نہ لیتے

خاموش بھی رہتے تو شکایت ہی ٹھہرتی

دل دے کے کہاں تک کوئی الزام نہ لیتے

اللہ رے مرے دل کی نزاکت کا تقاضا

تاثیر محبت سے بھی ہم کام نہ لیتے

تیری ہی رضا اور تھی ورنہ ترے بسمل

تلوار کے سائے میں بھی آرام نہ لیتے

اک جبر ہے یہ زندگی عشق کہ فانیؔ

ہم مفت بھی یہ عیش غم انجام نہ لیتے

فانی بدایونی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(699) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fani Badayuni, Koch Bas Hi Nah Tha Warna Yeh Ilzaam Nah Letay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 102 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fani Badayuni.