Dekha Jo Aina Tu Mujhay Sochna PaRa

دیکھا جو آئینہ تو مجھے سوچنا پڑا

دیکھا جو آئینہ تو مجھے سوچنا پڑا

خود سے نہ مل سکا تو مجھے سوچنا پڑا

اس کا جو خط ملا تو مجھے سوچنا پڑا

اپنا سا وہ لگا تو مجھے سوچنا پڑا

مجھ کو تھا یہ گماں کہ مجھی میں ہے اک انا

دیکھی تری انا تو مجھے سوچنا پڑا

دنیا سمجھ رہی تھی کہ ناراض مجھ سے ہے

لیکن وہ جب ملا تو مجھے سوچنا پڑا

سر کو چھپاؤں اپنے کہ پیروں کو ڈھانپ لوں

چھوٹی سی تھی ردا تو مجھے سوچنا پڑا

اک دن وہ میرے عیب گنانے لگا فراغؔ

جب خود ہی تھک گیا تو مجھے سوچنا پڑا

فراغ روہوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2000) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faragh Rohvi, Dekha Jo Aina Tu Mujhay Sochna PaRa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faragh Rohvi.