KaheN Hum Kia Kisi Se Dil Ki Weerani NahiN Jati

کہیں ہم کیا کسی سے دل کی ویرانی نہیں جاتی

کہیں ہم کیا کسی سے دل کی ویرانی نہیں جاتی

ہماری زندگی بھی ہم سے پہچانی نہیں جاتی

بظاہر ایسا لگتا ہے سبھی ہیں مست دنیا میں

مگر چہروں سے پوشیدہ پریشانی نہیں جاتی

روا داری کی چادر سے کہاں تک خود کو ڈھاپیں گے

کہ اس کم ظرف دنیا میں تو یہ تانی نہیں جاتی

بہت سمجھا لیا دل کو بچھڑنا تو مقدر تھا

نہ جانے کیوں مرے دل سے پشیمانی نہیں جاتی

بہت ہی لاڈلا ٹھہرا یہ مانا دل ہمارا ہے

مگر اب اس کی ہر اک بات تو مانی نہیں جاتی

فرح اقبال

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(403) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farah Iqbal, KaheN Hum Kia Kisi Se Dil Ki Weerani NahiN Jati in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farah Iqbal.