Bazeecha E Atfal Hae Dunya Meray Aagay

بازیچہ اطفال ہے دنیا مرے آگے

شیشے کے نازک برتن میں

صابن گھول رہی ہے ننھی گڑیا

نرکل کی نازک پھکنی سے

پھونک رہی ہے غبارے

ہر غبارہ اک خواب سا بن کر

تیر رہا ہے کمرے میں

کمرے کی دیواروں سے

ٹکرا ٹکرا کر ٹوٹ رہا ہے

میں خاموش اپنے کمرے میں

یہ کھیل تماشا دیکھ رہا ہوں

اس کے نازک ہونٹوں کی

نازک سی شرارت دیکھ رہا ہوں

یہ دیکھ رہا ہوں ہستی اپنی

دو چار نفس کی ہستی ہے

میں بھی اک شیشے کی دیوار ہوں

جس کے پیچھے بیٹھے اب تک

ننھے منے بچے کھیل رہے ہیں

کنکر پتھر پھینک رہے ہیں

شیشے کے نازک برتن میں

صابن گھول رہی ہے ننھی گڑیا

نرکل کی نازک پھکنی سے

پھونک رہی ہے غبارے

ہر غبارہ اک خواب سا بن کر

تیر رہا ہے کمرے میں

کمرے کی دیواروں سے

ٹکرا ٹکرا کر ٹوٹ رہا ہے

فرید عشرتی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(707) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fareed Ishrati, Bazeecha E Atfal Hae Dunya Meray Aagay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fareed Ishrati.