Sahar Honay Tak

سحر ہونے تک

ایک بجلی کے کھمبے تلے

کتنے زندہ بچے

اور کتنے جلے

کس کو معلوم ہو

کیسے معلوم ہو

کوئی ان کا شریک شب غم نہ تھا

شام سے تا سحر

اپنے انجام سے بے خبر

آتش سوز پنہاں میں جلتے رہے

رقص کرتے رہے

صبح ہونے سے پہلے

سیہ رات کے قافلے

سرد لاشوں کے انبار کو آ کے بکھرا گئے

شکستہ پروں کو ہواؤں کے جھونکے نہ جانے کدھر کو اڑا لے گئے

کس کو معلوم ہو

کیسے معلوم ہو

آتش سوز پنہاں میں کتنے جلے

کتنے زندہ بچے

فرید عشرتی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(687) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fareed Ishrati, Sahar Honay Tak in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fareed Ishrati.