Badan Ke Mausam Barsaat Main Nahi Ana

بدن کے موسم برسات میں نہیں آنا

بدن کے موسم برسات میں نہیں آنا

وصال کرنا ہے جذبات میں نہیں آنا

معاملات‌ محبت ہوں میں غلام ترا

پہ جان من تیری ہر بات میں نہیں آنا

عجیب روح کی شادی ہے ایک روح کے ساتھ

کسی بھی جسم کو بارات میں نہیں آنا

ہم آدھی رات کے بعد اپنے ساتھ رہتے ہیں

خیال رکھنا بہت رات میں نہیں آنا

فرحت احساس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(254) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farhat Ehsas, Badan Ke Mausam Barsaat Main Nahi Ana in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 113 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farhat Ehsas.