Raaz Obal PaRay Akhir AsmaN Kay SeenoN Say

راز ابل پڑے آخر آسماں کے سینوں سے

راز ابل پڑے آخر آسماں کے سینوں سے

ربط اس زمیں کو ہے اور بھی زمینوں سے

کون سا جہاں ہے یہ کیسے لوگ ہیں اس میں

اٹھتا ہے دھواں ہر دم دل کے آبگینوں سے

ہر بشر ہے فریادی ہر طرف اندھیرا ہے

مہر و مہ نہیں نکلے شہر میں مہینوں سے

اک طرف زبانوں پر دوستی کے نعرے ہیں

اک طرف ٹپکتا ہے خون آستینوں سے

مفلسوں کی بستی میں وسعتیں ہیں دنیا کی

آپ اتر کے دیکھیں تو اپنی شہ نشینوں سے

نا خدا کی ہمت کا امتحان لیتی ہے

ورنہ کد نہیں کچھ بھی موج کی سفینوں سے

تجربوں کی دنیا میں اہل علم و حکمت کو

رفعتیں ملیں فرحتؔ فکر و فن کے زینوں سے

فرحت قادری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(281) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farhat Qadri, Raaz Obal PaRay Akhir AsmaN Kay SeenoN Say in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 9 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farhat Qadri.