MENU Open Sub Menu

Tha Pa Shakista Ankh Magar Dekhti Tu Thi

تھا پا شکستہ آنکھ مگر دیکھتی تو تھی

تھا پا شکستہ آنکھ مگر دیکھتی تو تھی

مانا وہ بے عمل تھا مگر آگہی تو تھی

الزام نارسی سے مبرا نہیں تھی سیپ

لیکن کسی کے شوق میں ڈوبی ہوئی تو تھی

مانا وہ دشت شوق میں پیاسا ہی مر گیا

اک جھیل جستجو کی پس تشنگی تو تھی

احساس پر محیط تھے لفظوں کے دائرے

لفظوں کے دائروں میں مگر زندگی تو تھی

ویراں تھا صحن باغ مگر اس قدر نہ تھا

کونے میں سوکھے پتوں کی محفل جمی تو تھی

غم دور کر کے اور بھی مفلوج کر دیا

تنہائیوں کی رات میں دل بستگی تو تھی

اس ٹھنڈی رات میں تو اندھیرے کا راج ہے

سورج جلا رہا تھا مگر روشنی تو تھی

فرحت قادری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(211) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farhat Qadri, Tha Pa Shakista Ankh Magar Dekhti Tu Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 9 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farhat Qadri.