Dil Kay Ghao Jab AnkhoN MeiN Aatay HaiN

دل کے گھاؤ جب آنکھوں میں آتے ہیں

دل کے گھاؤ جب آنکھوں میں آتے ہیں

کتنے ہی زخموں کے شہر بساتے ہیں

کرب کی ہاہا کار لیے جسموں میں ہم

جنگل جنگل صحرا صحرا جاتے ہیں

دو دریا بھی جب آپس میں ملتے ہیں

دونوں اپنی اپنی پیاس بجھاتے ہیں

سوچوں کو لفظوں کی سزا دینے والے

سپنوں کے سچے ہونے سے گھبراتے ہیں

درد کا زندہ رہنا پیاس کا معجزہ ہے

دیوانے ہی یہ بن باس کماتے ہیں

تاریخوں میں گزرے ماضی کی صورت

اہل جنوں کے نقش پا مل جاتے ہیں

دکھ سکھ بھی کرتا ہے سر بھی پھوڑتا ہے

دیواروں سے فارغ کے سو ناتے ہیں

فارغ بخاری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1341) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farigh Bukhari, Dil Kay Ghao Jab AnkhoN MeiN Aatay HaiN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farigh Bukhari.