Is Owaj Par Nah Achalon Mujhe Howa Kar Ke

اس اوج پر نہ اچھالو مجھے ہوا کر کے

اس اوج پر نہ اچھالو مجھے ہوا کر کے

کہ میں جہاں سے ہوں اترا خدا خدا کر کے

ازل سے مجھ سے ہے وابستہ خیر و شر کا نظام

نہ دیکھو مجھ کو مری ذات سے جدا کر کے

میں جانتا ہوں مقفل ہیں سارے دروازے

مجھے یہ ضد ہے کہ گزروں مگر صدا کر کے

میں اپنے دور کے اس کرب کا ہوں آئینہ

جو پیش رو ہوئے رخصت مجھے عطا کر کے

شکست ضبط پہ میں بھی بہت خجل ہوں مگر

کھلا ہے اس کا بھرم میرا سامنا کر کے

یہ فخر کم نہیں فارغ ہے دل غریب تو کیا

کہ آبرو تو نہیں کھوئی التجا کر کے

فارغ بخاری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(752) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farigh Bukhari, Is Owaj Par Nah Achalon Mujhe Howa Kar Ke in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 43 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farigh Bukhari.