Es Qadar Mehv E Tasawwur HuN Sitamgar Tera

اس قدر محو تصور ہوں ستم گر تیرا

اس قدر محو تصور ہوں ستم گر تیرا

مجھ کو غربت میں نظر آنے لگا گھر تیرا

نشۂ مے کی بجھی پیاس نہ کچھ بھی افسوس

نام سنتے تھے بڑا چشمۂ کوثر تیرا

اپنے پامالیٔ دل کا مجھے افسوس نہیں

دیکھ ظالم نہ بگڑ جائے کہیں گھر تیرا

وہ بھی ہیں لوگ جو ہم بزم رہا کرتے تھے

ہم تو جیتے ہیں فقط نام ہی لے کر تیرا

جلوۂ طور کو کچھ اس کی نظر سے بھانپا

جس نے دیکھا ہے جمال‌ رخ انور تیرا

زندگی اس کی نصیب اس کے ہیں راتیں اس کی

جس کو ہو جلوۂ دیدار میسر تیرا

ہم نے کوشش تو بہت کی تھی اسے لانے کی

اے فروغؔ جگر افگار مقدر تیرا

فروغ حیدر آبادی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1647) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farogh Haidarabadi, Es Qadar Mehv E Tasawwur HuN Sitamgar Tera in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 3 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farogh Haidarabadi.