Ojlay Mathay Pe Naam Likh RakheN

اجلے ماتھے پہ نام لکھ رکھیں

اجلے ماتھے پہ نام لکھ رکھیں

خواہشوں کا مقام لکھ رکھیں

پھر ہوس کو ہے حسرت پرواز

آپ دانہ و دام لکھ رکھیں

ورنہ ہم اس کو بھول جائیں گے

سبز حرفوں میں نام لکھ رکھیں

جانے کس سمت کل ہوا لے جائے

لمحۂ شاد کام لکھ رکھیں

اپنے ہونے کا کچھ یقیں کر لیں

ریت پر نقش و نام لکھ رکھیں

شب کو ٹھٹھریں گے سب در و دیوار

دھوپ کچھ اپنے نام لکھ رکھیں

زردیاں اوڑھنے لگا سورج

نامۂ خوف شام لکھ رکھیں

پیلے پیلے بدن ہوا موسم

پیلا پیلا تمام لکھ رکھیں

آنے والے اداس نسلوں کے

سلسلہ وار نام لکھ رکھیں

فاروق مضطر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(790) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Farooq Muztar, Ojlay Mathay Pe Naam Likh RakheN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Farooq Muztar.