Nakhl Mamnooa Ke Rukh Dobarah Gaya Mein To Mara Gaya

نخل ممنوعہ کے رخ دوبارہ گیا میں تو مارا گیا

نخل ممنوعہ کے رخ دوبارہ گیا میں تو مارا گیا

عرش سے فرش پر کیوں اتارا گیا میں تو مارا گیا

جو پڑھا تھا کتابوں میں وہ اور تھا زندگی اور ہے

میرا ایمان سارے کا سارا گیا میں تو مارا گیا

غم گلے پڑ گیا زندگی بجھ گئی عقل جاتی رہی

عشق کے کھیل میں کیا تمہارا گیا میں تو مارا گیا

مجھ کو گھیرا ہے طوفان نے اس قدر کچھ نہ آئے نظر

میری کشتی گئی یا کنارہ گیا میں تو مارا گیا

مجھ کو تو ہی بتا دست و بازو مرے کھو گئے ہیں کہاں

اے محبت مرا ہر سہارا گیا میں تو مارا گیا

عشق چلتا بنا شاعری ہو چکی مے میسر نہیں

میں تو مارا گیا میں تو مارا گیا میں تو مارا گیا

مدعی بارگاہ محبت میں فرتاشؔ تھے اور بھی

میرا ہی نام لیکن پکارا گیا میں تو مارا گیا

فرتاش سید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(302) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fartash Syed, Nakhl Mamnooa Ke Rukh Dobarah Gaya Mein To Mara Gaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fartash Syed.