Rah E Zeest MeiN Jo Sarab Thay Mujhay Kha Gaey

رہِ زیست میں جو سراب تھے ، مجھے کھا گئے

رہِ زیست میں جو سراب تھے ، مجھے کھا گئے

وہ جو ہجرتوں کے عذاب تھے، مجھے کھا گئے

وہ جو چشمِ شوق میں خواب تھے، مجھے کھا گئے

وہ جو رتجگوں کے عذاب تھے، مجھے کھا گئے

سرِ گفتگو جو سوال تھے، وہ کمال تھے

وہ جو میرے تشنہ جواب تھے، مجھے کھا گئے

سرِ دشتِ شوق جو خار تھے، مرے یار تھے

وہ کہیں کہیں جو گلاب تھے، مجھے کھا گئے

وہ جو اک گھڑا مرے پاس تھا، مری آس تھا

وہ جو نفرتوں کے چناب تھے، مجھے کھا گئے

کسی بے اماں کو جو دی اماں، وہ عدوئے جاں

وہ عمل جو کارِ ثواب تھے، مجھے کھا گئے

مری عمر کی جو کتاب تھی، وہ نصاب تھی

وہ جو چند آخری باب تھے، مجھے کھا گئے

فرتاش سید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(957) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fartash Syed, Rah E Zeest MeiN Jo Sarab Thay Mujhay Kha Gaey in Urdu. This famous Urdu Shayari is a , and the type of this Nazam is Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fartash Syed.