Os Ki Deewar Pe Manqoosh Hae Woh Harf E Wafa

اس کی دیوار پہ منقوش ہے وہ حرف وفا

اس کی دیوار پہ منقوش ہے وہ حرف وفا

جس کی تعبیر کو خوابوں کا سہارا نہ ملا

میری تنہائی سے اکتا کے ترا نام بھی کل

اپنے مستقبل تاباں کی طرف لوٹ گیا

جب خیالات مرا ساتھ نہیں دیتے ہیں

دل میں در آتی ہے چپکے سے وہ مانوس صدا

ایسے خوش رنگ سرابوں کا سہارا کب تک

مسکراتا ہوں تو دیتی ہے تمنا یہ صدا

میں نے چاہا تھا نئی صبح کا سورج بن جاؤں

دور تک دامن شب اور بھی کچھ پھیل گیا

پھر خدائی میں ہے کیوں گھور اندھیروں کو ثبات

ہم چلو مان گئے ایک تجلی ہے خدا

شعر کہتا ہوں تو اکملؔ مرا دل کہتا ہے

فکر آوارہ پہ الفاظ کی چادر نہ چڑھا

فصیح اکمل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1074) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fasih Akmal, Os Ki Deewar Pe Manqoosh Hae Woh Harf E Wafa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fasih Akmal.