KhizaN MeiN Cheeni Chaey Ki Dawat

خزاں میں چینی چائے کی دعوت

آؤ لان میں بیٹھیں

شام کا سورج دیکھیں

زرد خزاں کی سرگم سے

جی کو بہلائیں

جنگل کو اک گیت سنائیں

سرخ سنہرے

پیڑ سے گرتے

درد کے پتے

ہاتھ میں لے کر

ان کی ریکھاؤں کو دیکھیں

پتوں کو چٹکی میں گھمائیں

اپنے اپنے ہاتھ کی دونوں پڑھیں لکیریں

اک دوجے کی آنکھوں کی گہرائی میں اتریں

پھول سجے ہیں جو گلدان میں میز کے اوپر

ان کو چومیں

دودھ کے جیسے اجلے کپوں میں

کیتلی سے تم چائے انڈیلو

بنا شکر اور بنا دودھ کی چائے سنہری

اچھی لگتی ہے جب پیار کی بات کریں

ماضی کے قصے دہرائیں

ہنستے ہنستے آنکھوں میں آنسو آ جائیں

ان باتوں سے چائے میٹھی ہو جاتی ہے

آؤ لان میں بیٹھیں

چینی چائے پئیں ہم

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(957) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, KhizaN MeiN Cheeni Chaey Ki Dawat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.