Os Ki Har Baat Ne Jadu Sa Kia Tha Pehlay

اس کی ہر بات نے جادو سا کیا تھا پہلے

اس کی ہر بات نے جادو سا کیا تھا پہلے

کتنا دلچسپ کہانی کا خدا تھا پہلے

خواب لمحہ تری خوشبو میں بسا تھا پہلے

بے خبر نیند میں اک پھول کھلا تھا پہلے

کوئی تاثیر تھی جو غم کو بھلا دیتی تھی

تیرے اندر کوئی فن کار چھپا تھا پہلے

یہ بدن اب تجھے بے روح کھنڈر لگتا ہے

اس حویلی میں اک انسان جیا تھا پہلے

وقت پر موت کی لذت بھی نہیں دے پایا

مجھ کو وہ آدمی ہیرا ہی لگا تھا پہلے

اک سوئیٹر نے بڑھا دی تھی جوانی میری

تم نے میرے لئے اک خواب بنا تھا پہلے

میں جو کہتا تھا وہی بات ہوا کرتی تھی

میرے گھر میں کوئی جادو کا دیا تھا پہلے

کیسے آتا ہے دبے پاؤں گناہوں کا خیال

کتنی خاموشی سے دروازہ کھلا تھا پہلے

جو بھی چہرہ تھا وہ اپنا سا لگا کرتا تھا

مے کدہ رقص میں جب جھوم رہا تھا پہلے

اٹھ گیا ہے تو اب اس شہر کو لے ڈوبے گا

وہی طوفاں مرے اندر جو دبا تھا پہلے

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(698) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Os Ki Har Baat Ne Jadu Sa Kia Tha Pehlay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.