Yaad

یاد

جنگل کے گہرے سائے

نزدیک آ رہے ہیں

وحشی پرندے ہر سو

سیٹی بجا رہے ہیں

کس موڑ پر رکا ہوں

اتنی خبر نہیں ہے

کیا اور اس کے آگے

اب رہگزر نہیں ہے

کیوں خود کو اجنبی سا

میں آج لگ رہا ہوں

اک دھندلے آئنے سے

پہچان مانگتا ہوں

دنیا سے تھک گیا ہوں

محسوس ہو رہا ہے

ہر ایک شے سے جی اب

مایوس ہو رہا ہے

پھر بچہ بن گیا تم

جھولا جھلا رہی ہو

یوں لگ رہا ہے جیسے

لوری سنا رہی ہو

بادل میں تم کو پا کر

دامن بھگو رہا ہو

بے وجہ یہ نمی ہے

بے بات رو رہا ہوں

کیا لمبی ہچکیوں سے

مجھ کو بلا رہی ہو

سچ سچ بتاؤ اماں

کیوں یاد آ رہی ہو

ف س اعجاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(575) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fay Seen Ejaz, Yaad in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fay Seen Ejaz.