Sarab Jism Ko Sehra E JaaN MeiN Rakh Dena

سراب جسم کو صحرائے جاں میں رکھ دینا

سراب جسم کو صحرائے جاں میں رکھ دینا

ذرا سی دھوپ بھی اس سائباں میں رکھ دینا

تجھے ہوس ہو جو مجھ کو ہدف بنانے کی

مجھے بھی تیر کی صورت کماں میں رکھ دینا

شکست کھائے ہوئے حوصلوں کا لشکر ہوں

اٹھا کے مجھ کو صف دشمناں میں رکھ دینا

جدید نسلوں کی خاطر یہ ورثہ کافی ہے

مرے یقیں کو حصار گماں میں رکھ دینا

یہ موج تاکہ سفینے کو گرم رو رکھے

کچھ آگ خیمۂ آب رواں میں رکھ دینا

بہت طویل ہے کالے سمندروں کا سفر

مجھے ہوا کی جگہ بادباں میں رکھ دینا

میں اپنے ذمے کسی کا حساب کیوں رکھوں

جو نفع ہے اسے جیب زیاں میں رکھ دینا

فضا ابن فیضی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(625) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faza Ibn E Faizi, Sarab Jism Ko Sehra E JaaN MeiN Rakh Dena in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 35 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faza Ibn E Faizi.