Hasrat Bhi Arzoo Bhi Hai Dil Main Tumhain Nahi

حسرت بھی آرزو بھی ہے دل میں تمہیں نہیں

حسرت بھی آرزو بھی ہے دل میں تمہیں نہیں

سب کچھ ہے اس مکان میں لیکن مکیں نہیں

دعویٰ عبث ہے تم کو کہ مجھ سا حسیں نہیں

دنیا میں حسن والے ہیں لاکھوں تمہیں نہیں

ہم ان کے جور‌ و ظلم سے بچ کر رہیں کہاں

کس جا یہ آسمان نہیں یہ زمیں نہیں

ان کا ٹھکانہ ان کا پتا کوئی جانے کیا

وہ ہیں تو سب جگہ ہیں نہیں تو کہیں نہیں

ہے آسمان پر نہ زمیں پر تری مثال

یکتا ہے تو غرض ترا ثانی کہیں نہیں

اے نالۂ رسا ہو ذرا اور بھی بلند

ہے پاس دور اب فلک ہفت میں نہیں

پتھر پڑیں نصیب میں مجھ بد نصیب کے

اس بت کے سنگ در پہ جو تیری جبیں نہیں

کیوں آئنے میں کون ہے کس کا جواب ہے

تم تو یہ کہہ رہے تجھے کہ مجھ سا حسیں نہیں

میں جاؤں کعبہ چھوڑ کے بت خانہ کیا ضرور

زاہد ہے اس کا جلوہ یہاں بھی وہیں نہیں

نالہ کناں ہے ابر تو گریہ کناں ہے ابر

فرقت میں تیری کس کا دل اندوہ گیں نہیں

جاتے رہے جوانی کے ساتھ اپنے سارے جوش

صابرؔ وہ ولولے وہ امنگیں رہیں نہیں

فضل حسین صابر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(499) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fazal Husain Sabir, Hasrat Bhi Arzoo Bhi Hai Dil Main Tumhain Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fazal Husain Sabir.