Rukh Ki Rangat Gulab Ki Si Hhai

رخ کی رنگت گلاب کی سی ہے

رخ کی رنگت گلاب کی سی ہے

اور چمک آفتاب کی سی ہے

کمسنی میں وہ آفت جاں ہیں

جو ادا ہے شباب کی سی ہے

آپ کے ہوتے حور کو چاہیں

کیا وہ صورت جناب کی سی ہے

غنچہ میں کوئی بات بھی کہیے

دہن لا جواب کی سی ہے

آنکھیں نرگس لڑاتی ہے ہم سے

یہ بھی اس بے حجاب کی سی ہے

اے گل تر ترے پسینے میں

رنگ اور بو گلاب کی سی ہے

نہ ہو باور تو دیکھیں آئینہ

شکل اس میں جناب کی سی ہے

روشنی ماہ و مہر انور میں

کب رخ لا جواب کی سی ہے

ابھی ابھرے ابھی مٹیں گے ہم

اپنی ہستی حباب کی سی ہے

کیوں نہ چومیں تمہاری صورت کو

یہ خدا کی کتاب کی سی ہے

طرز ان کے ستم کی اے صابرؔ

کرم بے حساب کی سی ہے

فضل حسین صابر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(531) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fazal Husain Sabir, Rukh Ki Rangat Gulab Ki Si Hhai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fazal Husain Sabir.