Mujhay Zindagi Ne Diya Kuchh NahiN

مجھے زندگی نے دیا کچھ نہیں

مجھے زندگی نے دیا کچھ نہیں

مگر مجھ کو اس کا گلا کچھ نہیں

خیالوں کے خنجر بہت تیز ہیں

وہی خوش ہے جو سوچتا کچھ نہیں

بہت خوب رو تھا مرا ہم سخن

اسے دیکھنے میں سنا کچھ نہیں

بس اک پل کی دیوار ہے درمیاں

عدم سے مرا فاصلہ کچھ نہیں

وہ گل نذر خاک خزاں ہو گئے

خبر تجھ کو باد صبا کچھ نہیں

یہ ہنگامۂ عالم آب و گل

بجز ایک شور فنا کچھ نہیں

وہی ہجر ہے اور وہی وصل ہے

مرا تجربہ بھی نیا کچھ نہیں

طوالت مری گفتگو میں جو تھی

مرے پاس کہنے کو تھا کچھ نہیں

فراستؔ وہی بے حسی ہے یہاں

ترے گریے سے تو ہوا کچھ نہیں

فراست رضوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(389) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Frasat Rizvi, Mujhay Zindagi Ne Diya Kuchh NahiN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Frasat Rizvi.