Hae Ibarat Jo Gham E Dil Se Woh Wehshat Bhi Na Thi

ہے عبارت جو غم دل سے وہ وحشت بھی نہ تھی

ہے عبارت جو غم دل سے وہ وحشت بھی نہ تھی

سچ ہے شاید کہ ہمیں اس سے محبت بھی نہ تھی

زندگی اور پر اسرار ہوئی جاتی ہے

عشق کا ساتھ نہ ہوتا تو شکایت بھی نہ تھی

تجھ سے چھٹ کر نہ کبھی پیار کسی سے کرتے

دل کے بہلانے کی لیکن کوئی صورت بھی نہ تھی

گھور اندھیروں میں خود اپنے کو صدا دے لیتے

راہ چلتے ہوئے لوگوں میں یہ جرأت بھی نہ تھی

ضد میں دنیا کی بہرحال ملا کرتے تھے

ورنہ ہم دونوں میں ایسی کوئی الفت بھی نہ تھی

مر مٹے لوگ سر رہ گزر عشق فضیلؔ

اپنے حصے میں یہ چھوٹی سی سعادت بھی نہ تھی

فضیل جعفری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(410) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fuzail Jafry, Hae Ibarat Jo Gham E Dil Se Woh Wehshat Bhi Na Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fuzail Jafry.