MENU Open Sub Menu

Khoon PalkoN Pe Sar E Sham Jamay Ga Kaesay

خون پلکوں پہ سر شام جمے گا کیسے

خون پلکوں پہ سر شام جمے گا کیسے

درد کا شہر جو اجڑا تو بسے گا کیسے

روز و شب یادوں کے آسیب ستائیں گے کوئی

شہر میں تجھ سے خفا ہو کے رہے گا کیسے

دل جلا لیتے تھے ہم لوگ اندھیروں میں مگر

دل بھی ان تیز ہواؤں میں جلے گا کیسے

کس مصیبت سے یہاں تک ترے ساتھ آئے تھے

راستہ تجھ سے الگ ہو کے کٹے گا کیسے

آخر اس کو بھی ہے کچھ جعفریؔ دنیا کا خیال

دیر تک رات گئے ساتھ رہے گا کیسے

فضیل جعفری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(226) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fuzail Jafry, Khoon PalkoN Pe Sar E Sham Jamay Ga Kaesay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 31 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fuzail Jafry.