Rishta Jigar Ka Khoon E Jjigar Se NahiN Raha

رشتہ جگر کا خون جگر سے نہیں رہا

رشتہ جگر کا خون جگر سے نہیں رہا

موسم طواف کوچہ و در کا نہیں رہا

دل یوں تو گاہ گاہ سلگتا ہے آج بھی

منظر مگر وہ رقص شرر کا نہیں رہا

مجبور ہو کے جھکنے لگا ہے یہاں وہاں

یہ سر بھی تیرے خاک بہ سر کا نہیں رہا

گھر کا تو خیر ذکر ہی کیا ہے کہ ذہن میں

نقشہ بھی اس بھرے پرے گھر کا نہیں رہا

باندھا کسی نے رخت سفر اس طرح کہ اب

دل کو فضیلؔ شوق سفر کا نہیں رہا

فضیل جعفری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(557) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fuzail Jafry, Rishta Jigar Ka Khoon E Jjigar Se NahiN Raha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fuzail Jafry.