Rukh HawaoN Kay Kisi Samt HuN Manzar HaiN Wohi

رخ ہواؤں کے کسی سمت ہوں منظر ہیں وہی

رخ ہواؤں کے کسی سمت ہوں منظر ہیں وہی

ٹوپیاں رنگ بدلتی ہیں مگر سر ہیں وہی

جن کے اجداد کی مہریں در و دیوار پہ ہیں

کیا ستم ہے کہ بھرے شہر میں بے گھر ہیں وہی

پھول ہی پھول تھے خوابوں میں سر وادیٔ شب

صبح دم راہوں میں جلتے ہوئے پتھر ہیں وہی

ناؤ کاغذ کی چلی کاٹھ کے گھوڑے دوڑے

شعبدہ بازی کے سچ پوچھو تو دفتر ہیں وہی

بک گئے پچھلے دنوں صاحب عالم کتنے

ہم فقیروں کے مگر جعفریؔ تیور ہیں وہی

فضیل جعفری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(315) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fuzail Jafry, Rukh HawaoN Kay Kisi Samt HuN Manzar HaiN Wohi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fuzail Jafry.