MENU Open Sub Menu

Sar E Sehra E Dunya Phool YuN Hi Tu NahiN Khiltay

سر صحرائے دنیا پھول یوں ہی تو نہیں کھلتے

سر صحرائے دنیا پھول یوں ہی تو نہیں کھلتے

دلوں کو جیتنا پڑتا ہے تحفے میں نہیں ملتے

یہ کیا منظر ہے جیسے سو گئی ہوں سوچ کی لہریں

یہ کیسی شام تنہائی ہے پتے تک نہیں ہلتے

مزا جب تھا کہ بوتل سے ابلتی پھیلتی رت میں

دھواں سانسوں سے اٹھتا گرم بوسوں سے بدن چھلتے

جو بھر بھی جائیں دل کے زخم دل ویسا نہیں رہتا

کچھ ایسے چاک ہوتے ہیں جو جڑ کر بھی نہیں سلتے

فضیل جعفری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(215) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Fuzail Jafry, Sar E Sehra E Dunya Phool YuN Hi Tu NahiN Khiltay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 31 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Fuzail Jafry.