Aata Hae YuN Mohaal Tu Ik Shab Yeh Khwaab Aa

آنا ہے یوں محال تو اک شب بہ خواب آ

آنا ہے یوں محال تو اک شب بہ خواب آ

مجھ تک خدا کے واسطے ظالم شتاب آ

دیتا ہوں نامہ میں تجھے اس شرط پر ابھی

قاصد تو اس کے پاس سے لے کر جواب آ

ایسا ہی عزم ہے تجھے گر کوئے یار کا

چلتا ہوں میں بھی اے دل پر اضطراب آ

یہ خستہ چشم وا ہے ترے انتظار میں

اے صبح منہ دکھا کہیں اے آفتاب آ

تا یہ شب فراق کی دیجور دور ہو

اے رشک ماہ گھر میں مرے بے نقاب آ

آب رواں و سبزہ و روئے نگار ہے

ساقی شتاب ایسے میں لے کر شراب آ

روئیں گلے سے لگ کے بہم خوب کوئی دم

کیا دیکھتا ہے اے دل بے صبر و تاب آ

بحر جہاں میں دیر شد آمد روا نہیں

مانند قطرہ جا تو برنگ حباب آ

قربانی آج در پہ ترے کرنی ہے مجھے

لے کر کے تیغ تو بھی برائے ثواب آ

شاید وہ تجھ کو دیکھ کے غم کھائے مصحفیؔ

تو اس کے سامنے تو بہ چشم پر آب آ

غلام ہمدانی مصحفی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(692) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hamdani Mushafi, Aata Hae YuN Mohaal Tu Ik Shab Yeh Khwaab Aa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hamdani Mushafi.