Bulbulo BaghbaN Ko KioN CheRa

بلبلو باغباں کو کیوں چھیڑا

بلبلو باغباں کو کیوں چھیڑا

تم نے ساز فغاں کو کیوں چھیڑا

مجھ کو اس ترک سے یہ شکوہ ہے

دل پہ رکھ کر سناں کو کیوں چھیڑا

نہ بلا لائے مجھ سا دیوانہ

سنگسار جہاں کو کیوں چھیڑا

اے ہما! اور کھانے تھے مردے

میرے ہی استخواں کو کیوں چھیڑا

بہلہ نادم ہو جی میں کہتا ہے

میں نے اس مومیاں کو کیوں چھیڑا

پھر گیا مجھ سے جو مزاج اس کا

گردش آسماں کو کیوں چھیڑا

دور سے اس نے میری صورت دیکھ

توسن خوش عناں کو کیوں چھیڑا

داستاں اپنی مجھ کو کہنی تھی

قصۂ این و آں کو کیوں چھیڑا

قصہ خواں اور لاکھ قصے تھے

تو نے ذکر بتاں کو کیوں چھیڑا

جس سے کل مجھ کو آ گئی تھی غشی

پھر اسی داستاں کو کیوں چھیڑا

مصحفیؔ گھر کے گھر جلا دے گا

ایسے آتش زباں کو کیوں چھیڑا

غلام ہمدانی مصحفی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(753) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hamdani Mushafi, Bulbulo BaghbaN Ko KioN CheRa in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hamdani Mushafi.