Ik Harf E Kun MeiN Jis Ne Kaon O MakaN Banaya

اک حرف کن میں جس نے کون و مکاں بنایا

اک حرف کن میں جس نے کون و مکاں بنایا

سارے جہاں کا تجھ کو آرام جاں بنایا

بوئے محبت اپنی رکھی خدا نے اس میں

سینے میں آدمی کے دل عطرداں بنایا

اپنی تو اس چمن میں نت عمر یوں ہی گزری

یاں آشیاں بنایا واں آشیاں بنایا

محنت پہ ٹک نظر کر صورت گر ازل نے

چالیس دن میں تیرا میم دہاں بنایا

ازبسکہ اس سفر میں منزل کو ہم نہ پہنچے

آوارگی نے ہم کو ریگ رواں بنایا

مغرور کیوں نہ ہووے صنعت پر اپنی صانع

کس واسطے جب اس نے یہ گلستاں بنایا

خون جگر سے میرے گل کی شبیہ کھینچی

نالے کو میرے لے کر سرو رواں بنایا

آتا ہے مصحفیؔ تو یہ کس کے زخم کھائے

تیر جفا کا کس نے تجھ کو نشاں بنایا

سو ٹکڑے ہے گریباں دامن لہو میں تر ہے

یہ رنگ تو نے ظالم اپنا کہاں بنایا

غلام ہمدانی مصحفی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(676) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hamdani Mushafi, Ik Harf E Kun MeiN Jis Ne Kaon O MakaN Banaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hamdani Mushafi.