Jab Keh Bay Parda Tou Hoa Ho Ga

جب کہ بے پردہ تو ہوا ہوگا

جب کہ بے پردہ تو ہوا ہوگا

ماہ پردے سے تک رہا ہوگا

کچھ ہے سرخی سی آج پلکوں پر

قطرۂ خوں کوئی بہا ہوگا

میرے نامے سے خوں ٹپکتا تھا

دیکھ کر اس نے کیا کہا ہوگا

گھورتا ہے مجھے وہ دل کی مرے

میری نظروں سے پا گیا ہوگا

یہی رہتا ہے اب تو دھیان مجھے

واں سے قاصد مرا چلا ہوگا

جس گھڑی تجھ کو کنج خلوت میں

پا کے تنہا وہ آ گیا ہوگا

مصحفیؔ اس گھڑی میں حیراں ہوں

تجھ سے کیوں کر رہا گیا ہوگا

غلام ہمدانی مصحفی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1562) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hamdani Mushafi, Jab Keh Bay Parda Tou Hoa Ho Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hamdani Mushafi.