Subah Tak Jin Se Bohat Bezar Ho Jata Hon Main

صبح تک جن سے بہت بیزار ہو جاتا ہوں میں

صبح تک جن سے بہت بیزار ہو جاتا ہوں میں

رات ہوتے ہی انہی گلیوں میں کھو جاتا ہوں میں

خواب میں گم ہوں کہ باہر کی فضا اچھی نہیں

آنکھ کھلتے ہی کہیں زنجیر ہو جاتا ہوں میں

کھینچ لاتی ہے اسی کوچے میں پھر آوارگی

روز جس کوچے سے اپنے شہر کو جاتا ہوں میں

اس اندھیرے میں چراغ خواب کی خواہش نہیں

یہ بھی کیا کم ہے کہ تھوڑی دیر سو جاتا ہوں میں

رات لاتی ہے کسی کے قرب کی خواہش مگر

صبح ہوتے ہی کسی سے دور ہو جاتا ہوں میں

جی میں آتا ہے کہ دنیا کو بدلنا چاہئے

اور اپنے آپ سے مایوس ہو جاتا ہوں میں

بارے باغ صحن دنیا میں بہت دن رہ لیا

خوش رہو اب اس گلی سے دوستو جاتا ہوں میں

غلام حسین ساجد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(477) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hussain Sajid, Subah Tak Jin Se Bohat Bezar Ho Jata Hon Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 88 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hussain Sajid.