Zamee Ka Rang Wohi Aasmaa Ka Rang Wohi

زمیں کا رنگ وہی آسماں کا رنگ وہی

زمیں کا رنگ وہی آسماں کا رنگ وہی

وہی صباحت گل ہے بنائے سنگ وہی

جو خواب بن نہیں پایا تھا میری آنکھوں کا

ٹھہر گیا ہے مرے آئنے پہ زنگ وہی

بدن میں آگ لگاتے ہوئے دعا کے ہاتھ

لہو میں پھول کھلاتی ہوئی امنگ وہی

بدلنے والا ہی خود کو بدل نہیں پایا

وہی بہانے ہیں اس کے ہیں عذر لنگ وہی

ہزار صلح کا پرچم بلند کر دیکھو

مگر زمیں پہ مسلط رہے گی جنگ وہی

پرانی وضع سے آیا ہوں تیرے کوچے میں

بدن میں زور وہی روح میں ترنگ وہی

کچھ ایسے ڈھنگ سے تبدیل ہو رہا ہے وہ

کہ رہ نہ جائے کسی مرحلے پہ دنگ وہی

وہی نگر وہی گلیاں وہی مکیں ساجدؔ

پڑی ہے پاؤں میں زنجیر نام و ننگ وہی

غلام حسین ساجد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(392) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ghulam Hussain Sajid, Zamee Ka Rang Wohi Aasmaa Ka Rang Wohi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Urdu Poetry. Also there are 88 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ghulam Hussain Sajid.