Wohi Wada Hai Wohi Arzoo Wohi Apni Umar Tamam Hai

وہی وعدہ ہے وہی آرزو وہی اپنی عمر تمام ہے

وہی وعدہ ہے وہی آرزو وہی اپنی عمر تمام ہے

وہی چشم ہے وہی راہ ہے وہی صبح ہے وہی شام ہے

وہی خستہ حال خراب ہے وہی خواب کشتۂ خواب ہے

وہی زندگی کو جواب ہے نہ سلام ہے نہ پیام ہے

وہی جوش نالہ و آہ میں وہی شعلہ جان تباہ میں

وہی برق یاس نگاہ میں جو خیال ہے سو وہ خام ہے

وہی خواب و خور کی تلاش ہے وہی جان و دل میں خراش ہے

وہی رنج غیر معاش ہے مجھے زندگی بھی حرام ہے

وہی ہجر دشمن وصل ہے وہی مرگ و زیست میں فصل ہے

وہی اپنے شغل سے شغل ہے وہی اپنے کام سے کام ہے

وہی شق جگر نہ سیو سیو وہی زیست ہے نہ جیو جیو

وہی خون دل نہ پیو پیو وہی بادہ ہے وہی جام ہے

وہی شوق راہ ہے رہنما وہی جلوہ گاہ ہے رخ کشا

وہی بزم ناز ہے جا بہ جا وہی ہر قدم پہ مقام ہے

وہی نیم جاں دم واپسیں وہی نالہ کش سخن حزیں

وہی یاس زیست ہے دل نشیں کہ زباں پہ آپ کا نام ہے

وہی رنج ہے تو یوں ہی سہی وہ قلقؔ ہی تھا کہ یوں ہی نبھی

مری آپ کو بھی ہے بندگی مرا عشق کو بھی سلام ہے

غلام مولیٰ قلق

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(284) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of GHULAM MAULA QALAQ, Wohi Wada Hai Wohi Arzoo Wohi Apni Umar Tamam Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 44 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of GHULAM MAULA QALAQ.