Koi Atkaa Howa Hai Pal Shayad

کوئی اٹکا ہوا ہے پل شاید

کوئی اٹکا ہوا ہے پل شاید

وقت میں پڑ گیا ہے بل شاید

لب پہ آئی مری غزل شاید

وہ اکیلے ہیں آج کل شاید

دل اگر ہے تو درد بھی ہوگا

اس کا کوئی نہیں ہے حل شاید

جانتے ہیں ثواب رحم و کرم

ان سے ہوتا نہیں عمل شاید

آ رہی ہے جو چاپ قدموں کی

کھل رہے ہیں کہیں کنول شاید

راکھ کو بھی کرید کر دیکھو

ابھی جلتا ہو کوئی پل شاید

چاند ڈوبے تو چاند ہی نکلے

آپ کے پاس ہوگا حل شاید

گلزار

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1826) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Gulzar, Koi Atkaa Howa Hai Pal Shayad in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 107 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Gulzar.