Aag Hai Phaily Hui Kaali Ghataon Ki Jagah

آگ ہے پھیلی ہوئی کالی گھٹاؤں کی جگہ

آگ ہے پھیلی ہوئی کالی گھٹاؤں کی جگہ

بد دعائیں ہیں لبوں پر اب دعاؤں کی جگہ

انتخاب اہل گلشن پر بہت روتا ہے دل

دیکھ کر زاغ و زغن کو خوش نواؤں کی جگہ

کچھ بھی ہوتا پر نہ ہوتے پارہ پارہ جسم و جاں

راہزن ہوتے اگر ان رہنماؤں کی جگہ

لٹ گئی اس دور میں اہل قلم کی آبرو

بک رہے ہیں اب صحافی بیسواؤں کی جگہ

کچھ تو آتا ہم کو بھی جاں سے گزرنے کا مزہ

غیر ہوتے کاش جالبؔ آشناؤں کی جگہ

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(3193) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Aag Hai Phaily Hui Kaali Ghataon Ki Jagah in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.