Chor Tha Zakhamo Se Dil Zakhmi Jigar Bhi Ho Gaya

چور تھا زخموں سے دل زخمی جگر بھی ہو گیا

چور تھا زخموں سے دل زخمی جگر بھی ہو گیا

اس کو روتے تھے کہ سونا یہ نگر بھی ہو گیا

لوگ اسی صورت پریشاں ہیں جدھر بھی دیکھیے

اور وہ کہتے ہیں کوہ غم تو سر بھی ہو گیا

بام و در پر ہے مسلط آج بھی شام الم

یوں تو ان گلیوں سے خورشید سحر بھی ہو گیا

اس ستم گر کی حقیقت ہم پہ ظاہر ہو گئی

ختم خوش فہمی کی منزل کا سفر بھی ہو گیا

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(627) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Chor Tha Zakhamo Se Dil Zakhmi Jigar Bhi Ho Gaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.