Ehad Saza

عہد سزا

یہ ایک عہد سزا ہے جزا کی بات نہ کر

دعا سے ہاتھ اٹھا رکھ دوا کی بات نہ کر

خدا کے نام پہ ظالم نہیں یہ ظلم روا

مجھے جو چاہے سزا دے خدا کی بات نہ کر

حیات اب تو انہیں محبسوں میں گزرے گی

ستم گروں سے کوئی التجا کی بات نہ کر

انہی کے ہاتھ میں پتھر ہیں جن کو پیار کیا

یہ دیکھ حشر ہمارا وفا کی بات نہ کر

ابھی تو پائی ہے میں نے رہائی رہزن سے

بھٹک نہ جاؤں میں پھر رہنما کی بات نہ کر

بجھا دیا ہے ہوا نے ہر ایک دیا کا دیا

نہ ڈھونڈ اہل کرم کو دیا کی بات نہ کر

نزول حبس ہوا ہے فلک سے اے جالبؔ

گھٹا گھٹا ہی سہی دم گھٹا کی بات نہ کر

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(4429) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Ehad Saza in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.