Kabhi To Mehrbaan Ho Kar Bulaa Len

کبھی تو مہرباں ہو کر بلا لیں

کبھی تو مہرباں ہو کر بلا لیں

یہ مہوش ہم فقیروں کی دعا لیں

نہ جانے پھر یہ رت آئے نہ آئے

جواں پھولوں کی کچھ خوشبو چرا لیں

بہت روئے زمانے کے لیے ہم

ذرا اپنے لیے آنسو بہا لیں

ہم ان کو بھولنے والے نہیں ہیں

سمجھتے ہیں غم دوراں کی چالیں

ہماری بھی سنبھل جائے گی حالت

وہ پہلے اپنی زلفیں تو سنبھالیں

نکلنے کو ہے وہ مہتاب گھر سے

ستاروں سے کہو نظریں جھکا لیں

ہم اپنے راستے پر چل رہے ہیں

جناب شیخ اپنا راستہ لیں

زمانہ تو یوں ہی روٹھا رہے گا

چلو جالبؔ انہیں چل کر منا لیں

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2759) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Habib Jalib, Kabhi To Mehrbaan Ho Kar Bulaa Len in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Habib Jalib.