Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main, Urdu Ghazal By Habib Jalib

Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main is a famous Urdu Ghazal written by a famous poet, Habib Jalib. Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main comes under the Sad category of Urdu Ghazal. You can read Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main on this page of UrduPoint.

کیا کیا لوگ گزر جاتے ہیں رنگ برنگی کاروں میں

حبیب جالب

کیا کیا لوگ گزر جاتے ہیں رنگ برنگی کاروں میں

دل کو تھام کے رہ جاتے ہیں دل والے بازاروں میں

یہ بے درد زمانہ ہم سے تیرا درد نہ چھین سکا

ہم نے دل کی بات کہی ہے تیروں میں تلواروں میں

ہونٹوں پر آہیں کیوں ہوتیں آنکھیں نسدن کیوں روتیں

کوئی اگر اپنا بھی ہوتا اونچے عہدے داروں میں

صدر محفل داد جسے دے داد اسی کو ملتی ہے

ہائے کہاں ہم آن پھنسے ہیں ظالم دنیا داروں میں

رہنے کو گھر بھی مل جاتا چاک جگر بھی سل جاتا

جالبؔ تم بھی شعر سناتے جا کے اگر درباروں میں

حبیب جالب

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(3478) ووٹ وصول ہوئے

You can read Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main written by Habib Jalib at UrduPoint. Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main is one of the masterpieces written by Habib Jalib. You can also find the complete poetry collection of Habib Jalib by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Habib Jalib' above.

Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main is a widely read Urdu Ghazal. If you like Kya Kya Log Guzar Jatay Hain Rang Barangi Karon Main, you will also like to read other famous Urdu Ghazal.

You can also read Sad Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.