Social Poetry of Habib Jalib - Social Shayari

حبیب جالب کی معاشرتی شاعری

بد قسمتی کو یہ بھی گوارا نہ ہو سکا

Bad Qismati Ko Yeh Bhi Gawara Nah Ho Saka

(Habib Jalib) حبیب جالب

تو رنگ ہے غبار ہیں تیری گلی کے لوگ

Tu Rang Hai Gubhar Hain Teri Gali Ke Log

(Habib Jalib) حبیب جالب

ترے ماتھے پہ جب تک بل رہا ہے

Tray Mathey Pay Jab Tak Bal Raha Hai

(Habib Jalib) حبیب جالب

جب کوئی کلی صحن گلستاں میں کھلی ہے

Jab Koi Kalie Sehan Gulisitan Main Khuli Hai

(Habib Jalib) حبیب جالب

جب کوئی کلی صحن گلستاں میں کھلی ہے

Jab Koi Kalie Sehan Gulisitan Main Khuli Hai

(Habib Jalib) حبیب جالب

میری بچی میں آؤں نہ آؤں

Meri Bachi Main Ao Na Ao

(Habib Jalib) حبیب جالب

دن بھر کافی ہاؤس میں بیٹھے کچھ دبلے پتلے نقاد

Din Bhar Kaafi House Main Baithy Kuch Dublay Putlay Naqad

(Habib Jalib) حبیب جالب

سچ ہی لکھتے جانا

Such Hi Likhte Jana

(Habib Jalib) حبیب جالب

وہ دیکھنے مجھے آنا تو چاہتا ہوگا

Woh Dekhnay Mujhe Aana To Chahta Hoga

(Habib Jalib) حبیب جالب

آگ ہے پھیلی ہوئی کالی گھٹاؤں کی جگہ

Aag Hai Phaily Hui Kaali Ghataon Ki Jagah

(Habib Jalib) حبیب جالب

کبھی تو مہرباں ہو کر بلا لیں

Kabhi To Mehrbaan Ho Kar Bulaa Len

(Habib Jalib) حبیب جالب

لوگ گیتوں کا نگر یاد آیا

Log Geeton Ka Nagar Yaad Aya

(Habib Jalib) حبیب جالب

کم پرانا بہت نیا تھا فراق

Kam Porana Bohat Naya Tha Faraq

(Habib Jalib) حبیب جالب

تیرے مدھر گیتوں کے سہارے

Tairay Madhur Geeton Kay Saharay

(Habib Jalib) حبیب جالب

لائل پور

Laeal Poor

(Habib Jalib) حبیب جالب

گھر کے زنداں سے اسے فرصت ملے تو آئے بھی

Ghar Ke Zandan Se Usay Fursat Miley To Aaye Bhi

(Habib Jalib) حبیب جالب

کون بتائے کون سجھائے کون سے دیس سدھار گئے

Kon Betaye Kon Sajhay Kon Se Dais Sudhar Gaye

(Habib Jalib) حبیب جالب

جاگنے والو تا بہ سحر خاموش رہو

Jaagne Walo Taa Bah Sehar Khamosh Raho

(Habib Jalib) حبیب جالب

نظر نظر میں لیے تیرا پیار پھرتے ہیں

Nazar Nazar Main Liye Tera Pyar Phirtay Hain

(Habib Jalib) حبیب جالب

اس گلی کے لوگوں کو منہ لگا کے پچھتائے

Is Gali Ke Logon Ko Mun Laga Ke Pachtaye

(Habib Jalib) حبیب جالب

کچھ لوگ خیالوں سے چلے جائیں تو سوئیں

Kuch Log Khayalon Se Chalay Jayen To Soyen

(Habib Jalib) حبیب جالب

ماں

Maa

(Habib Jalib) حبیب جالب

دستور

Dastoor

(Habib Jalib) حبیب جالب

تیرے ہونے سے

Tairay Honay Say

(Habib Jalib) حبیب جالب

Records 1 To 24 (Total 56 Records)

Social Shayari of Habib Jalib - Poetry of Social. Read the best collection of Social poetry by Habib Jalib, Read the famous Social poetry, and Social Shayari by the poet. Social Nazam and Social Ghazals of the poet. The best collection of Shayari by Habib Jalib online. You can also read different types of poetries by the poet including Social Shayari from different books of the poet.