Fikar Sood O Zayan Mein Rehta Hon

فکر سود و زیاں میں رہتا ہوں

فکر سود و زیاں میں رہتا ہوں

میں بھی اس خاکداں میں رہتا ہوں

نیلگوں آسمان کے نیچے

خیمۂ جسم و جاں میں رہتا ہوں

میں ہوں آزاد کب زمانے میں

قید وہم و گماں میں رہتا ہوں

میں محبت کی روشنی بن کر

وقت کی کہکشاں میں رہتا ہوں

میں بہاروں کے رنگ میں ڈھل کر

منظر بوستاں میں رہتا ہوں

جانے کیا بات ہے کہ میں تنہا

محفل دوستاں میں رہتا ہوں

اپنے بوڑھے وجود کے اندر

اک شکستہ مکاں میں رہتا ہوں

فکر اتلاف زندگی کیسا

میں اجل کی اماں میں رہتا ہوں

میں بگولوں کے درمیاں شاہدؔ

دشت عصر رواں میں رہتا ہوں

حفیظ شاہد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(383) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of HAFEEZ SHAHID, Fikar Sood O Zayan Mein Rehta Hon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 35 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of HAFEEZ SHAHID.