Rachi Dimagh Mein Ho Jis Ke Is Badan Ki Bo

رچی دماغ میں ہو جس کے اس بدن کی بو

رچی دماغ میں ہو جس کے اس بدن کی بو

خوش آوے کب اسے نسرین و نسترن کی بو

وہ جس نے سونگھی ہو اک دفعہ اس کے تن کی بو

نہ عطر کی اسے بھاوے نہ یاسمن کی بو

ہزار جان سے مشک ختن ہو حلقہ بگوش

جو سونگھ لے کبھی اس زلف پر شکن کی بو

بسا ہو دل میں بھلا جس کے وہ گل خوبی

پسند آئے اسے کس طرح چمن کی بو

مشام جاں ہوئی یعقوب کی وہیں تازہ

جو پہنچی مصر سے یوسف کے پیرہن کی بو

کہاں ہے سیب میں سیب ذقن کی سی بو باس

جہاں میں روح فزا ہے تو ہے ذقن کی بو

مشام جاں کو تر و تازہ عیشؔ کرتی ہے

جہاں کے باغ میں گلدستۂ سخن کی بو

حکیم آغا جان عیش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(315) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of HAKEEM AAGHA JAN AISH, Rachi Dimagh Mein Ho Jis Ke Is Badan Ki Bo in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 34 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of HAKEEM AAGHA JAN AISH.