Kabhi Wo Hath Na Aya Hawaoon Jaisa Hai

کبھی وہ ہاتھ نہ آیا ہواؤں جیسا ہے

کبھی وہ ہاتھ نہ آیا ہواؤں جیسا ہے

وہ ایک شخص جو سچ مچ خداؤں جیسا ہے

ہماری شمع تمنا بھی جل کے خاک ہوئی

ہمارے شعلوں کا عالم چتاؤں جیسا ہے

وہ بس گیا ہے جو آ کر ہماری سانسوں میں

جبھی تو لہجہ ہمارا دعاؤں جیسا ہے

تمہارے بعد اجالے بھی ہو گئے رخصت

ہمارے شہر کا منظر بھی گاؤں جیسا ہے

وہ ایک شخص جو ہم سے ہے اجنبی اب تک

خلوص اس کا مگر آشناؤں جیسا ہے

ہمارے غم میں وہ زلفیں بکھر گئیں ناصرؔ

جبھی تو آج کا موسم بھی چھاؤں جیسا ہے

حکیم ناصر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(685) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hakeem Nasir, Kabhi Wo Hath Na Aya Hawaoon Jaisa Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hakeem Nasir.