Aik Qatra Na Kaheen Khon Ka Baha Mere Baad

ایک قطرہ نہ کہیں خوں کا بہا میرے بعد

ایک قطرہ نہ کہیں خوں کا بہا میرے بعد

زنگ آلود ہوئی تیغ جفا میرے بعد

کیوں ہر اک موڑ پہ ہوتا ہے گھٹن کا احساس

تنگ کیوں ہونے لگی میری فضا میرے بعد

دیکھتے دیکھتے ہی ماند پڑے شمس و قمر

خود سے بیزار ہوئے صبح مسا میرے بعد

ہر طرف زردی رخسار نظر آتی ہے

کہیں روشن نہ ملا رنگ حنا میرے بعد

رک گیا قافلۂ عمر سبک رو شاید

دیکھ خاموش ہے آواز درا میرے بعد

زندگی بھر نہ کیا یاد کسی نے اور اب

پوچھتے ہیں وہ میرے گھر کا پتا میرے بعد

عمر بھر اس کو سنبھالے ہوئے رکھا میں نے

گر نہ جائے کہیں دیوار انا میرے بعد

اب بھی کیا اس میں ہے آباد سیاہی ہمدمؔ

میرے ویرانے کا کیا حال ہوا میرے بعد

ہمدم کاشمیری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(422) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hamdam Kashmiri, Aik Qatra Na Kaheen Khon Ka Baha Mere Baad in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hamdam Kashmiri.