Ja Baja Aag Bichayi Thi Kabhi

جا بہ جا آگ بچھائی تھی کبھی

جا بہ جا آگ بچھائی تھی کبھی

اپنے بس میں بھی خدائی تھی کبھی

میرے آئینے میں خود میرے سوا

کوئی صورت نظر آئی تھی کبھی

دشمنوں سے بھی تھا یارانہ مرا

دوستوں سے بھی لڑائی تھی کبھی

رنگ چبھتے ہیں جو اب آنکھوں میں

اپنی تصویر بنائی تھی کبھی

جب سے ہیں اپنے پرائے بیزار

رسم دنیا کی اٹھائی تھی کبھی

ہم نے بھی دشت کو مہکایا ہے

ہم نے بھی خاک اڑائی تھی کبھی

کھود کر زیر زمیں کچھ نہ ملا

اپنی شمشیر چھپائی تھی کبھی

اب دہکتی ہے دوبارا ہمدمؔ

آگ سینے میں دبائی تھی کبھی

ہمدم کاشمیری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(378) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hamdam Kashmiri, Ja Baja Aag Bichayi Thi Kabhi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hamdam Kashmiri.