Kahan Tehreerain Main Ne Bant Di Hain

کہاں تحریریں میں نے بانٹ دی ہیں

کہاں تحریریں میں نے بانٹ دی ہیں

ہنر تدبیریں میں نے بانٹ دی ہیں

تمہارے خواب نے تاخیر کر دی

سبھی تعبیریں میں نے بانٹ دی ہیں

لکھو گھر کے سبھی افراد میں اب

مری تقدیریں میں نے بانٹ دی ہیں

کئی غزلیں تمہارے نام لکھیں

بڑی جاگیریں میں نے بانٹ دی ہیں

سنو ان گونگے بہرے بام و در کو

کئی تقریریں میں نے بانٹ دی ہیں

مری آنکھیں جنہیں محفوظ کرتیں

وہ سب تصویریں میں نے بانٹ دی ہیں

مرے قیدی مرے الفاظ حامدؔ

سخن زنجیریں میں نے بانٹ دی ہیں

حامد اقبال صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(439) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Hamid Iqbal Siddiqui, Kahan Tehreerain Main Ne Bant Di Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 11 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Hamid Iqbal Siddiqui.